حالیہ 24 گھنٹوں میں مزید 11 افراد کے اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھنے سے مجموعی جانی نقصان کم ازکم 521 تک ہو گیا

31مارچ 2021(سیدھی بات نیوز سرویس)جاپان نے میانمار میں تشدد کے جواز میں اس ملک کو سرکاری امداد روک دیمیانمار میں فوجی بغاوت اور حکومتی ارکان کو حراست میں لیے جانے کے خلاف احتجاجی مظاہروں میں سیکیورٹی قوتوں کی سخت گیر مداخلت سے ہلاکتوں کی تعداد 521 تک جا پہنچی ہے۔ میانمار سیاسی قیدیوں کی امدادی تنظیم کی جانب سے جاری کردہ یومیہ رپورٹ کے مطابق حالیہ 24 گھنٹوں میں مزید 11 افراد کے اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھنے سے مجموعی جانی نقصان کم ازکم 521 تک ہو گیا ہے۔رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ ملک میں 2 ہزار 608 افراد زیر ِ حراست ہیں اور 120 کے خلاف گرفتاری کے وارنٹ جاری کیے گئے ہیں۔دوسری جانب امریکی وزارت خارجہ نے میانمار میں بڑھنے والے تشدد کے واقعات کے جواز میں بعض مجبوری خدمات کے علاوہ اپنے سفارتکاروں کو اس ملک سے واپس لوٹنے کا کہا ہے۔جاپان نے بھی مظاہرین کے خلاف تشدد کے باعث میانما ر کو سرکاری ترقیاتی امداد روکنے کی اطلاع دی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here