یو پی کانگریس اقلیتی سیل کے چیئرمین شہنواز عالم کا کہنا ہے کہ یوگی حکومت مخالفت کی ہر آواز کو دبانے کی کوشش میں لگی ہوئی ہے۔

اٹاوہ:15ستمبر 2020(سیدھی بات نیوز سرویس)  اترپردیش کانگریس اقلیتی سیل کے چیئر مین شہنواز عالم نے پیر کے روز کہا کہ اترپردیش حکومت مخالفت کی ہر آواز کو دبانا چاہتی ہینیز سچ اور مفاد عامہ میں بولنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کر کے انہیں جیل بھیج کر کے خائف کررہی ہے۔ اٹاوہ کے یک روزہ دورے پر آئے شہنواز عالم نے کہا کہ حکومت گئو تحفظ کے نام پر اقلیتی سماج کا استحصال کررہی ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ جب گئو کشی پر ریاست میں مکمل پابندی ہے تو گوشت برآمدات کے شعبے میں اترپردیش اول نمبر پر کیوں ہے۔انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت گئو تحفظ میں بھی ناکام ثابت ہوئی ہے۔اقلیتی سیل کے چیئر مین نے کہا کہ 19اگست تک ریاستی حکومت نے 76ایسے لوگوں پر این ایس اے لگایا ہے جنہیں پولیس نے گئو کشی کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔انہوں نے کہا کہ گئو کشی میں پھنسائے گئے 2384افراد کو گینگسٹر ایکٹ اور 1742لوگوں کو غنڈہ ایکٹ میں جیل بھیجا گیا ہے۔شہنواز عالم نے کہا کہ گئو کشی میں بے گناہ مسلمانوں کو پھنسانے کے بجائے حکومت کو مغربی اترپردیش کے اپنے ایک وزیر کے سلاٹر ہاوس پر چھاپہ ماری کرنی چاہئے جو ریاست کا سب سے بڑا گوشت سلاٹر ہاوس ہے۔انہوں نے تیقن دیا کہ اقلیتی کانگریس گئو کشی اور شہریت مخالف قانون کی مخالفت کرنے پر این ایس اے میں پھنسائے گئے بے گناہ لوگوں کو ہر ممکن قانونی مدد کے ساتھ ان کے لئے تحریک چلائے گی۔

(قومی آواز)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here