یہ امریکی انتظامیہ کی جانب سے ایران سے تیل کی ترسیل کے دوران قبضہ کردہ وسیع ترین مقدار کا حامل پیٹرول ہے

15 اگست 2020(سیدھی بات نیوز سرویس) امریکی انتظامیہ نے ایران سے ونیز ویلا کو پیٹرول کی ترسیل کرتے ہوئے ایران پر عائد پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے کے جواز میں 4 پیٹرول ٹینکروں پر قبضہ کرنے کے دعووں کی تصدیق کر دی ہے۔ وال سٹریٹ جورنل اخبار کی حکام کے حوالے سے شائع کردہ کردہ خبر کے بعد امریکی وزارت قانون و خارجہ نے بیانات جاری کیے ہیں۔ وزارتِ قانون کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ میں اس امر پر زور دیا گیا ہے کہ ’’دہشت گرد‘‘ اعلان کردہ ایرانی پاسداران انقلاب کی جانب سے ونیزویلا کو روانہ کردہ پیٹرول ٹینکرو ں کو امریکہ نے اپنی تحویل میں لے لیا ہے اور اس طرح کئی ملین ڈالر کے لین دین کا سلسلہ بند کر دیا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ یہ کاروائی امریکی انتظامیہ کی جانب سے ایران سے تیل کی ترسیل کے دوران قبضہ کردہ وسیع ترین مقدار کا حامل پیٹرول ہے۔ امریکی دفترِ خارجہ کے ترجمان مورگن اورتھاگوس کا بھی کہنا ہے کہ نمائندہ خصوصی برائے ایران برائن ہوک کی ڈپلومیسی کی بدولت تیل کی ترسیل کو روک دیا گیا ہے، ہماری پابندیوں کی بدولت ایران اور ونیزویلا تیل کی ترسیل کے معاملے میں اب گریز کررہے ہیں۔ امریکہ، ایران اور مادورو انتظامیہ کے خلاف زیادہ سے زیادہ دباؤ کی پالیسیوں پر عمل پیرا ہے۔

(ٹی آر ٹی)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here