آئی پی ایف ٹی کے رکن اسمبلی برشکیٹو دیب برما نے بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ اتحاد کے اصول و نظریات پر عمل درآمد نہیں کر رہی ہے اور غیر ضروری بیان دے کر عوام کو بے وقوف بنا رہی ہے۔

اگرتلہ:10 جولائی 2020(سیدھی بات نیوز سرویس)  تریپورہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور اس کی اتحادی پارٹی انڈیجینس پیپلز فرنٹ آف تریپورہ (آئی پی ایف ٹی) کے درمیان قبائلیوں کی ترقی کے مسائل کے سلسلے میں اختلافات بڑھتے جا رہے ہیں۔ اس درمیان آئی پی ایف ٹی کی جانب سے تریپورہ قبائلی خود مختار ضلع کونسل (اے ڈی سی) کے ہیڈکوارٹر پر بلایا گیا 24 گھنٹے کا بند پر امن رہا اور آج صبح ختم ہو گیا۔ آئی پی ایف ٹی اپنے ایک اتحادی کی گرفتاری کی بھی مخالفت کر رہی ہے۔ یہ ہڑتال پر امن رہا اور اس دوران کوئی بھی نا خوشگوار واقعہ نہیں ہوا۔ آئی پی ایف ٹی کے رہنماؤں اور اراکین اسمبلی نے وزیر اعلیٰ بپلب کمار دیو کی قیادت والی سرکار کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اگر حکومت قبائلیوں کی ترقی سے متعلق مسائل پر توجہ نہیں دے گی تو اتحاد ٹوٹ سکتا ہے۔ آئی پی ایف ٹی کے رکن اسمبلی برشکیٹو دیب برما نے جمعرات کو کھوملنگ میں حامیوں سے خطاب کرتے ہوئیکہا کہ بی جے پی اتحاد کے اصول و نظریات پر عمل درآمد نہیں کر رہی ہے اور غیر ضروری بیان دے کر عوام کو بے وقوف بنا رہی ہے۔ آئی پی ایف ٹی کے حامی قبائلیوں کی ترقی سے متعلق مسائل کو اٹھا رہے ہیں لیکن انھیں بلا وجہ پریشان کر رہی ہے۔ آئی پی ایف ٹی کے رہنما نے کہا کہ” تریپورہ حکومت میں اتحادی ہونے کے سبب عوام ہم سے بی جے پی کی جانب سے کیے گئے وعدوں کے بارے میں پوچھ رہے ہیں۔ بی جے پی نے الیکشن سے قبل بڑے بڑے وعدے کیے تھے جن پر عوام کی طرح ہم نے بھی یقین کر لیا تھا لیکن اب وہ جھوٹے ثابت ہو رہے ہیں۔ ہم رکن اسمبلی کے طور پر اپنے اپنے علاقوں میں مخالفت کا سامنا کر رہے ہیں۔ اراکین اسمبلی کے پاس کوئی طاقت نہیں ہے اور ایسا لگتا ہے کہ دھیرے دھیرے اقتدار کو “سینٹرلائزڈ” (مرکزیت) کیا جا رہا ہے”۔ آئی پی ایف ٹی کے رہنما نے کہا کہ قبائلی ترقی اور اے ڈی ایس کو مضبوط کرنے سے متعلق کئی وعدے کیے گئے تھے لیکن گزشتہ ڈھائی برسوں میں کچھ بھی نہیں ہوا ہے۔ پہاڑی علاقوں میں رہنے والے افراد کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ریاست کے عوام صحت، تعلیم، عوامی خدمات اور لاء اینڈ آرڈر کی موجودہ صورتحال کے سلسلے حکومت سے کافی ناراض ہیں۔ ان سبھی چیزوں کے لیے آئی پی ایف ٹی کو ذمہ داد قرار دیا جا رہا ہے لیکن ہم اب یہ اور برداشت نہیں کریں گے۔ بی جے پی آئی پی ایف ٹی کو دیہی علاقوں میں کمزور کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے حامیوں کو جھوٹے الزامات میں پھنسایا جا سکتا ہے۔ ہم حکومت سے جلد از جلد اپنے حامی پردیپ دیب برما کو رہا کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ پولیس نے ان پر بی جے پی دفتر پر حملہ کرنے کے بے بنیاد الزام میں پھنسایا ہے۔

(قومی آواز)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here