‘کوویکسن’ نامی ٹیکہ کو بنانے کا سہرا ‘بھارت بایوٹیک’ کمپنی کے سر جاتا ہے جس نے آئی سی ایم آر اور این آئی وی کے تعاون سے کورونا کے خلاف جاری جنگ میں ایک اہم پیش رفت کی ہے۔

30جون 2020(سیدھی بات نیوز سرویس) کورونا انفیکشن کے بڑھتے ہوئے قہر کے درمیان پوری دنیا میں کورونا ویکسین اور دواؤں پر تجربہ جاری ہے۔ کئی ممالک میں ویکسین کا انسانوں پر تجربہ بھی شروع ہو گیا ہے اور خوشی کی بات یہ ہے کہ اب ہندوستان میں بھی ایک ویکسین کے انسانوں پر ٹرائل کی اجازت مل گئی ہے۔ یہ ویکسین ہندوستان میں ہی تیار کیا گیا ہے اور نام ہے ‘کوویکسن’۔ ڈی سی جی آئی (ڈرگ کنٹرولر جنرل آف انڈیا) نے اس ٹیکہ کے انسانوں پر ٹیسٹ کی اجازت دے دی ہے اور امکان ہے کہ بہت جلد یعنی جولائی سے یہ ٹیسٹ شروع ہو جائے گا۔دراصل ‘کوویکسن’ نامی ٹیکہ کو بنانے کا سہرا ‘بھارت بایوٹیک’ کمپنی کے سر جاتا ہے جس نے آئی سی ایم آر (انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ) اور این آئی وی (نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی) کے تعاون سے کورونا کے خلاف جاری جنگ میں ایک اہم پیش رفت کی ہے۔ ہندوستان میں اگلے مہینے سے اس ٹیکہ کا پہلے اور دوسرے مرحلے کا تجربہ شروع ہوگا۔ کمپنی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ٹیکہ کو بنانے میں آئی سی ایم آر اور این آئی وی کا تعاون بہت اہم رہا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ اب تک کورونا انفیکشن سے لڑنے کے لیے کسی بھی طرح کا ٹیکہ نہیں بن پایا ہے۔ چونکہ کورونا انفیکشن بہت تیزی کے ساتھ ملک میں پھیل رہا ہے، اس لیے ‘کوویکسن’ کے انسانوں پر ٹرائل کو بہت اہم قرار دیا جا رہا ہے اور سبھی کی نظر اس ٹرائل پر ہے۔ اس سے قبل روس نے ایک ویکسین کا انسانوں پر ٹرائل کیا ہے اور اس کے مثبت نتائج بھی سامنے آئے ہیں، لیکن جن مریضوں پر اس کا استعمال کیا گیا تھا، ان کا ابھی تک حتمی نتیجہ برآمد نہیں ہوا ہے۔

(قومی آواز)

https://youtu.be/3a3C3J_TZWo

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here