سعودی عرب کی طرف سے تیل تنصیبات پر ہونے والے حملوں میں ایران کے ملوث ہونے کے ثبوت پیش کیے جانے پر صدر ٹرمپ نے کہا کہ ایران پر مزید نافذ کردہ تعزیرات اگلے 48 گھنٹوں میں منظر عام پر لائی جائیں گی

19ستمبر (سیدھی بات نیوز سرویس) اس سے قبل صدر ٹرمپ کہہ چکے ہیں کہ سعودی تنصیبات پر حملوں میں ایران ملوث ہے اور وہ ایران کے خلاف کاروائی کا اشارہ بھی دے چکے ہیں۔گزشتہ روز لاس اینجلس میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ حتمی آپشن ایران کے ساتھ جنگ ہوگی۔امریکی صدر کا مزید کہنا تھا کہ ایران پر مزید نافذ کردہ تعزیرات اگلے 48 گھنٹوں میں منظر عام پر لائی جائیں گی۔صدر ٹرمپ نے ایک ٹوئٹ میں بھی کہا ہے کہ انہوں نے وزارت خزانہ کو ایران پر مزید تعزیرات نافذ کرنے کا حکم دیا ہےحملوں میں ایران کے ملوث ہونے کے بعد ریاض اور واشنگٹن پر دباؤ بڑھ گیا کہ وہ ایران کے خلاف انتقامی کاروائی کریں تاہم، دونوں اتحادی ممالک اب تک محتاط رویہ اختیار کیے ہوئے ہیں۔صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ وہ جنگ نہیں چاہتے اور وہ خلیجی اور یورپی ریاستوں سے مشاورت کررہے ہیں۔

  نیوز18

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here