اترپردیش کے ضلع باغپت میں بے خوف بدمعاشوں نے مزاحمت کرنے پر خاتون کانسٹیبل کو گولی مار دی اور اسکوٹی لوٹ کر فرار ہوگئے، اسکوٹی کی ڈگی میں تقریباً 2 لاکھ روپئے رکھے ہوئے تھے۔

17ستمبر (سیدھی بات نیوز سرویس) باغپت: اترپردیش کے ضلع باغپت میں بے خوف بدمعاشوں نے مزاحمت کرنے پر خاتون کانسٹیبل کو گولی مار دی اور اسکوٹی لوٹ کر فرار ہوگئے، اسکوٹی کی ڈگی میں تقریباً 2 لاکھ روپئے رکھے ہوئے تھے۔ایس پی پرتاپ گوپیندر یادو کے مطابق غازی آباد کے خاتون تھانے میں تعینات خاتون کانسٹیبل رینو دوشنبہ کی شام اسکوٹی سے باغپت ضلع کے لہاری گاؤں میں واقع اپنی سسرال جا رہی تھی۔ تقریباً سات بجے انہیں نیتھلا گاؤں کے ایک پبلک اسکول کے نزدیک بائیک سوار دو نقاب پوش بدمعاشوں نے روک لیا اور لوٹ کی کوشش کرنے لگے۔ مزاحمت کرنے پر بدمعاشوں نے رینو پر فائرنگ کر دی اور اس کی اسکوٹی لے کر فرار ہوگئے۔انہوں نے بتایا کہ زخمی رینو کو ابتدائی علاج کے بعد دہلی کے جی ٹی بی اسپتال ریفر کردیا گیا ہے۔ ایس پی نے بتایا کہ ابتدائی تفتیش میں یہ بھی معلوم چلا ہے کہ رینو کا اپنے شوہر سے تنازعہ چل رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سسرال کی طرف سے رینو پر پہلے بھی حملہ کیے جا چکے ہیں۔ وہیں خاتون کانسٹیبل نے کہا کہ اس کی ساس نے اس کو مارنے کی سپار ی دی ہوئی ہے۔ایس پی پرتاپ گوپیندر نے دعوی کرتے ہوئے کہا کہ پولس معاملہ کی ہر زاویہ سے جانچ کر رہی ہے اور معاملے کا جلد ہی پردہ فاش کر دیا جائیگا۔

(قومی آواز)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here