مقبوضہ کشمیر میں بنیادی انسانی حقوق کی بحالی کو ممکن بنایا جائے، ہائی کمشنر اقوام متحدہ

10ستمبر (سیدھی بات نیوز سرویس) اقوام متحدہ کی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق میشل باکلیٹ کا کہنا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں کرفیو میں نرمی لائے اور کشمیریوں کو بنیادی سہولتوں تک رسائی کی اجازت دے۔ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے اجلاس سے خطاب میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی اقدامات سے انسانی حقوق مسخ ہونے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انٹرنیٹ اور ذرائع مواصلات پوری طرح معطل ہیں، پُرامن مظاہروں پر پابندیاں عائد ہیں جبکہ سیاسی رہنماوٴں کو گھروں میں یا پھروں جیلوں میں بند کرد یا گیا ہے۔باکلیٹ نے بھارت پر زور دیا کہ یہ مقبوضہ کشمیر میں سخت پہرے اور کرفیو میں نرمی کرے اور کشمیریوں کو بنیادی سہولتوں سے ہمکنار ہونے کی اجازت دے اور علاقے کے مستقبل سے متعلق ہر فیصلے میں کشمیریوں کو حقِ رائے دہی فراہم کیا جائے۔انہوں نے صوبہ آسام میں مسلمانوں سمیت 19 لاکھ سے زائد افراد کی شہریت منسوخ کرنے پر بھی اپنے خدشات کو زیر ِ لب لاتے ہوئے کہا کہ آسام میں 19 لاکھ افراد کی شہریت کی منسوخی نے غیر یقینی اور ذہنی کرب کی فضا پیدا کی ہے، بھارت شہریت منسوخی کے خلاف اپیلوں کے دوران قانونی ضابطوں پر عمل درآمد کو یقینی بنائے اور متاثرہ افراد کو ملک بدر یا پھر جیلوں میں بند نہ کرے۔

(ٹی آر ٹی)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here