اٹاوہ:14جولائی(سیدھی بات نیوز سرویس/ذرائع) اترپردیش کے ضلع اٹاوہ کے بسرہرا علاقے میں گھر سے باہر لگے ہیڈ پائپ سے پانی بھرنے گئی پانچویں جماعت کی طالبہ کے ساتھ عصمت دری کیے جانے کا معاملہ روشنی میں آیا ہے۔ نوجوان بچی کو زبردستی اپنے گھر لے گیا اور اس کے ساتھ منھ کالا کیا۔پولیس نے اتوار کو بتایا کہ سات جولائی کو دس سالہ پانچویں جماعت میں زیر تعلیم بچی دوپہر میں گھر سے کچھ دوری پر لگے ہینڈ پمپ سے پانی لینے گئی تھی۔ تبھی گاؤں ہی کے رہنے والا ایک نوجوان بچی کو بہلا کر اپنے گھر لے گیا اور بچی کے منھ میں کپڑا ٹھونس کر اس کے ساتھ منھ کالا کیا۔ واپس آکر بچی نے پوری آپ بیتی اپنے والدہ سے کہہ سنائی۔ ماں نے والد کو پوری بات بتائی۔متاثرہ کے والد نے تھانہ پہنچ کر پورے معاملے کی شکایت کی۔ تھانہ پولس نے معاملے کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے گاؤں جاکر پورے معاملے کی چھان بین کی۔ چھان بین کے دوران پولس کو پتا چلا کہ ملزم واقعہ کے دن سے ہی فرار ہے۔ پولس نے بچی کا طبی معائنہ کرا کے اسے گھر واپس بھیج دیا۔ پولس کو ملزم نوجوان کی تلاش ہے۔

(قومی آواز)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here