سری نگر: 7جولائی (سیدھی بات نیوز سرویس/ذرائع) نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے اتحاد و اتفاق کو کامیابی اور کامرانی کی واحد ضمانت قرار دیتے ہوئے کہا کہ اتحاد کے فقدان کی وجہ سے مسلمانوں کی حالت پتلی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان تب تک کامیابی اور کامرانی کی راہ پر گامزن نہیں ہوسکتے جب تک ان کی صفوں میں اتحاد نہ ہو۔فاروق عبداللہ نے ان باتوں کا اظہار ہفتہ کے روز سری نگر کے کلی پورہ نوپورہ میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ‘عالم اسلام کے ساتھ ساتھ ہندوستان کے مسلمانوں میں اتحاد و اتفاق کے فقدان سے ہماری حالت خستہ ہے۔ اتحاد و اتفاق کے نہ ہونے کی وجہ سے ہی مسلمانوں کے خلاف ہر سازش اور ہر منصوبہ کامیاب ہو رہا ہے۔ ہم تب تک کامیابی اور کامرانی کی راہ پر گامزن نہیں ہوسکتے جب تک ہماری صفوں میں اتحاد نہ ہو’۔انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کا شیرازہ بکھیرنے میں امریکہ صہیونی طاقتوں کے ساتھ مل کر سیاہ رول نبھا رہا ہے، مسلمان ممالک میں جاری قتل و غارت کو دیکھ کر ایک ذی حس انسان کا کلیجہ پھٹنے کو آتا ہے، شیر خور بچوں کی لاشیں دیکھ کر انسانیت کانپ اٹھتی ہے، یہ سب کچھ مسلمانوں کے درمیان پائی جا رہی نااتفاقی اور اتحاد کے فقدان کا نتیجہ ہے۔ صرف عراق میں ہی 10 لاکھ کے قریب لوگ مارے گئے۔فاروق عبداللہ نے مسلمانان عالم سے اپیل کی کہ وہ آپسی اختلافات دور کرکے ایک پلیٹ فارم پر آکر امت مسلمہ کو درپیش چیلنجوں کا سامنا کرنے کے لئے ایک جٹ ہوجائیں اور شام میں قتل و غارت گری فوری طور پر بند کرانے میں اپنا رول نبھائیں۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے مسلمانان بھی اس وقت نازک دور سے گزر رہے ہیں، فرقہ پرستوں کے غلبہ کی وجہ سے اقلیتیں عدم تحفظ کی شکار ہوگئیں ہیں۔ ہندوستانی مسلمانوں کو بھی ایک ہی جھنڈے تلے آنا چاہیے کیونکہ ٹولیوں میں بٹ جانے سے دشمن آسانی سے کامیاب ہوجاتا ہے۔اسی موقعے پر وادی کی معروف دینی و سماجی شخصیت اور جے کے بینک کے سابق چیئرمین منشی غلام حسن کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔فاروق عبداللہ نے کہا کہ مرحوم کے والد الحاج منشی اسحاق نے بحیثیت صدر تحریک محاذ رائے شماری ناقابل بیان مشکلات اور مصائب جھیلے۔ مرحوم غلام حسن بھی اپنے والد کی طرح عوام دوست، غریب پرور اور انسان دوست شخصیت کے مالک تھے۔

(قومی آواز)

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here