25جون 2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)پاکستانی و بھارتی ماہرین کا خیال ہے کہ روسی ساخت کا ایس۔400 فضائی دفاعی نظام امریکی پیٹریاٹ نظام سے کہیں زیادہ بہتر متبادل ہے۔بھارتی فضائیہ کے سابق ڈپٹی چیف کپیل کاک اور پاکستانی فوجی خفیہ سروس آئی ایس آئی کے سابق ڈائریکٹر جنرل احسان الحق نے انادولو ایجنسی سے انٹرویو میں بتایا ہے کہ متحدہ امریکہ کی جانب سے بعض ممالک پر اپنے مفادات کی خاطر زبردستی بعض اقدامات پر مجبور کرنا رد عمل کا موجب بن رہا ہے، امریکہ کا یہ مؤقف ریاستوں کی حکمت عملی خود مختار پر ایک لحاظ سے حملے کے مترادف ہے۔کپیل کاک نے بتایا کہ ایس۔ 400 اپنی خصوصیات کے اعتبار سے دنیا بھر میں راڈار کا تعاقب و اسکرینگ، ارتفاع پیرامیٹرز، وسیع پیمانے کی حدود جیسے عوامل میں ایک بہترین دفاعی نظام ہے۔ جبکہ امریکہ کی پیٹریاٹ میزائل دفاعی نظام کی فراہمی کی تجویز، مملکتوں کی سٹریٹیجک ضروریات کو پورا کر سکنے کا حامل ایک متبادل نہیں ہے۔آئی ایس آئی کے سابقہ ڈائریکٹر احسان الحق کا کہنا ہے کہ ترکی اور بھارت اپنے حکمت عملی فیصلوں کے معاملے میں خود مختاری کا مظاہرہ کرنے کے نظریات کے مالک ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ امریکی انتظامیہ کو ایس۔400 کے معاملے میں سفارتی حل تلاش کرنا چاہیے اورترکی کے ساتھ اپنے سیاسی و فوجی روابط کو بھی برقرار رکھنا چاہیے۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here