14جون 2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)بحیرہ عرب میں اٹھا ‘وایو’ طوفان سے اگرچہ گجرات کو نقصان نہیں پہنچا ہے اور عمان کی طرف بڑھ گیا ہو، لیکن ’وایو‘ طوفان کے چلتے جنوب مغرب میں مانسون کی رفتار پر اثر پڑا ہے۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مانسون کو ممبئی پہنچنے میں ایک ہفتہ اور لگ سکتا ہے، بتا دیں کہ ہندوستان میں اس سال مانسون کی مقررہ رفتار سے پہلے ہی ایک ہفتے آہستہ چل رہا ہے، ہر سال مئی کے آخری ہفتے میں کیرل پہنچنے والا مانسون 8 جون کو کیرالہ کے ساحل پر پہنچا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق مانسون کیرالہ اور کرناٹک میں اب روک دیا گیا، عام طور پر مانسون کیرالا پہنچنے کے بعد 2 سے 3 دن کے بعد مغربی کنارے سے ہوتا ہوا ممبئی تک پہنچ جاتا تھا لیکن اس بار 10 جون کے بعد سے بحیرہ عرب میں ’وایو طوفان‘ کے چلتے مانسون کی رفتار کافی کم ہو گئی ہے، اب اس کے 20 جون کے آس پاس ممبئی پہنچنے کے امکان ہیں، ایسے میں مہاراشٹر، گجرات، راجستھان اور مدھیہ پردیش جیسی ریاستوں میں اب بارش کے لئے اور انتظار کرنا پڑے گا۔اگر بات کریں ملک کی راجدھانی دہلی کی تو لوگوں کو شدید گرمی سے جلد راحت ملنے کی توقع نہیں ہے، دہلی کے لئے مانسون کا انتظار اور طویل ہو گیا ہے، بتا دیں کہ دہلی میں بارش جنوب-مغرب مانسون سے ہوتی ہے، جو ممبئی کے راستے داخل ہوتے ہوئے اراولی رینج کے سہارے دہلی تک پہنچ جاتا ہے۔ اس مرتبہ جون کے آخری ہفتے تک دہلی میں مانسون کے پہنچنے کی توقع تھی۔ لیکن وایو طوفان نے اسے بھی ختم کر دیا ہے، اب دہلی میں بھی بارش کے لئے جولائی تک انتظار کرنا پڑے گا۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here