امراوتی:12جون 2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع) آندھرا پردیش قانون ساز اسمبلی کے پہلے اجلاس کا بدھ سے آغاز ہو گیا۔ اجلاس کے آغاز کے ساتھ ہی عبوری اسپیکر کے طور پر اپلا نائیڈو نے اپنی ذمہ داری سنبھالی۔ وزیراعلی جگن موہن ریڈی، اپوزیشن لیڈر چندرا بابو سمیت ارکان اسمبلی نے اس پہلے اجلاس میں شرکت کی۔عبوری اسپیکر اپلا نائیڈو نے منتخب ارکان اسمبلی کو حلف دلایا۔ سب سے پہلے کڑپہ کے حلقے پُلی ویندلہ سے منتخب رکن اسمبلی و وزیر اعلی جگن موہن ریڈی کو حلف دلوایا۔ جگن جیسے ہی حلف لینے کے لئے اٹھے ایوان نے میز پر ہاتھ تھپتھپاکر ان کا استقبال کیا، جس پر جگن نے ہاتھ جوڑ کر شکریہ ادا کیا۔اس کے بعد چتور ضلع کے اسمبلی حلقے کُپم سے منتخب اپوزیشن لیڈر چندرابابو نائیڈو نے رکن اسمبلی کے طور پر حلف لیا۔ بعد ازاں حروف تہجی کے لحاظ سے اسپیکر نے دیگر ارکان اسمبلی کو حلف دلایا۔ واضح رہے کہ قانون ساز اسمبلی کا یہ اجلاس اگلے پانچ دنوں تک جاری رہے گا۔ جبکہ گورنر ای ایس ایل نرسمہن جمعہ کے روز ایوان سے خطاب کریں گے۔اجلاس کے آغاز کے سلسلے میں اسمبلی میں اصل باب الداخلہ، وزیر اعلی کی آمد اور روانگی والے باب الداخلوں کو پھولوں سے سجایا گیا تھا۔ اسمبلی میں اپوزیشن کے لیے عارضی چیمبر الاٹ کیا گیا ہے۔ اپوزیشن لیڈر چندرابابو نائیڈو کو تلگو دیشم لیجسلیچر پارٹی کے دفتر کے کمرہ کے بازو کا کمرہ الاٹ کیا گیا ہے۔اجلاس کے حاضر ہونے والے ارکان اسمبلی کو کسی بھی قسم کی دشواری نہ ہونے کے لیے ٹریفک کے موثر انتظامات کیے گئے ہیں۔ اسپیکر اسمبلی کے طور پر سیتارام کا کل سرکاری طور پر انتخاب ہوگا۔ اس ماہ کی 14 تاریخ کو قانون ساز اسمبلی اور کونسل کے مشترکہ اجلاس سے گورنر نرسمہن خطاب کریں گے۔یاد رہے کہ جگن موہن ریڈی نے 11 اپریل کو ہوئے انتخابات میں اپنی قیادت میں ’وائی ایس آر پی سی‘ کو شاندار جیت دلائی۔ 175 ارکان پر مشتمل اسمبلی میں وائی ایس آر سی پی کو 151 نشستیں حاصل ہوئیں۔ چندرا بابو نائیڈو کی ٹی ڈی پی نے 23 سیٹیں جبکہ اداکار پون کلیان کی ’جنا سینا پارٹی‘ کو محض ایک سیٹ حاصل ہوئی۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here