یمن:15 مئی 2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)یمن میں ایرانی حمایت کے حامل حوثیوں نے سعودی عرب کے اندرونی علاقوں پر پہلے سے زیادہ شدید اور وسیع حملوں کی دھمکی دی ہے۔حوثیوں کے ترجمان یحیٰ سیری نے جاری کردہ تحریری بیان میں کہا ہے کہ ہمارے کل بھیجے گئے ڈرون طیاروں نے سعودی عرب کے اندرونی علاقوں پر آپریشنوں کے آغاز سے لے کر اب تک کے بڑے ترین حملے کئے ہیں۔انہوں نے کہا ہے کہ فضائی حملوں میں سعودی عرب کے شہروں دویدمی اور عفیف کی کلیدی اہمیت کی حامل تنصیبات کو ہدف بنایا گیا ہے۔سیری نے کہا ہے کہ نہایت محتاط نگرانی اور علاقے میں موجود اپنے حامیوں کے تعاون سے کئے گئے ان حملوں کے نتیجے میں پائپ لائن میں پیٹرول کی ترسیل رُک گئی ہے اور سعودی معیشت براہ راست متاثر ہوئی ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ ہم دشمن ممالک یعنی سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے اندرونی علاقوں پر زیادہ بڑے اور وسیع پیمانے کے حملے کر سکتے ہیں۔ علاقے میں مسئلے کا حل صرف یہ ہے کہ یمن پر حملوں کا سلسلہ بند کیا جائے۔حوثیوں کے ٹیلی ویژن چینل المسیرہ نے اپنی کل کی نشریات میں سعودی عرب کے اہم مقامات پر 7 فضائی حملوں کا دعوی کیا تھا۔سعودی عرب کے وزیر توانائی، صنعت و معدنی وسائل خالد الفلاح نے بھی مشرقی علاقے کے ذخائر سے مغربی ساحل کی بندرگاہ تک پیٹرول کی ترسیل کرنے والی پائپ لائن پر موجود 2 پمپ اسٹیشنوں پر ڈرون حملوں کا اعلان کیا تھا۔تاہم سعودی پیٹرول کمپنی آرامکو نے جاری کردہ بیان میں کہا تھا کہ حملوں کی وجہ سے گاہکو ں کو پیٹرول گیس کی فراہمی متاثر نہیں ہوئی۔واضح رہے کہ سعودی عرب کی زیر قیادت کولیشن فورسز مارچ 2015 سے حوثیوں کے خلاف حکومتی فورسز کے ساتھ تعاون کر رہی ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here