بنگلور: 30اپریل (سیدھی بات نیوز سرویس) مدارس دینیہ کے فارغ التحصیل علماء و حفاظ کے اعزاز میں الگ الگ محفلیں سجانے سلسلہ جاری ہے،اسی کڑی میں اب مدرسہ طہٰ ڈی جے ہلی کا بھی نام جڑ گیا برو زجمعرات کو بعد نمازِ مغرب شہر کے مشہور مدرسہ طٰہٰ ڈی جے ہلی میں یہاں سے فارغ ہونے والے،حفاظ اور ناظرہ ختم کرنے والے طلباء کے اعزاز میں خوبصورت انعامی اجلاس، بصدارت جناب افسر علی خان صاحب منعقد کیا گیا ہے، اس محفل میں لوگوں نے کثیرتعداد میں شرکت کرتے ہوئے جلسہ کو کامیاب بنایا: اس جلسہ کی اہم کڑی یہ تھی کہ اس جلسہ میں حفاظ کو سائیکلس انعامات میں دئے گئے تاکہ دوسرے طلباء کو بھی حفظِ قرآن کا شوق پیدا ہو اور پھر حفاظ کے شایانِ شان کی ان کی عزت افزائی ہوسکے: اس محفل میں مولانا شاکر اللہ رشادی امام و خطیب بلال مسجد بنرگھٹہ روڈ اور محمد افتخار احمد بحیثیت مہمانِ خصوصی شرکت کرتے ہوئے تعلیم و تعلیم کے خصوصیات پر روشنی ڈالی اور عوام کو قرآن کے ساتھ نسبت بڑھانے اور پھر اولاد کو دینی تعلیم کے لئے وقف کرنے کی تلقین کی، اس موقع پر علاقے کے ناگزیر حالات پر بھی روشنی ڈالی اور عوام سے اپیل کی گئی کہ دینی ماحول بنائے رکھنے کے لئے متعلقہ مدرسہ کے ذمہداران کا تعاون کیا جائے: ملحوظ رہے کہ علاقہ پسماندہ ہونے کی وجہ سے یہاں اس مدرسہ کے مہتمم محمد حارث کریم شاہی خوب محنت کرتے ہیں اور یہاں پر دن رات عوام کو مسجد کے ماحول سے جوڑنے کی کوشش جارہی ہے اور نوجوانوں کو دینی تعلیم سے آراستہ کرنے کے ساتھ الگ الگ طریقون سے دینی تعلیم میں رغبت لینے کے لئے عملی سطح پر گھر گھر جاکر محنت کی جارہی ہے۔ اسی کے کڑی کے طور پر یہ انعامی جلسہ منعقد کیا گیا جس میں ہر ایک انعام سے نوازا گیا تاکہ طلباء کے اندر تعلیم کی رغبت بنائے رکھے، اس موقع پر مقامی علماء کرام کے علاوہ ذمہداران بھی موجود تھے، طلباء نے مکالمے، اور دیگر ثقافتی پروگرام پیش کئے: دعائیہ کلمات پر یہ اجلاس اختتام کو پہنچا۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here