07اپریل 2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)لوک سبھا الیکشن کولےکرلیڈروں کی سیاسی بیان بازی جاری ہے۔ یوپی کےاناو سے بی جے پی رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج نے ایک بارپھرکانگریس پرحملہ بولا ہے۔ ساکشی مہاراج نےکہا ہےکہ کانگریس کے انتخابی منشورکودیکھ کرلگتا ہےکہ اسے دہشت گردانہ تنظیم جیش محمد نے تیارکیا ہے۔بی جے پی نے اناو سے ساکشی مہاراج پردوبارہ امیدواربنایا ہے۔ ہفتہ کوانہوں نے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ اس دوران انہوں نے مخالف جماعتوں پرجم کرنشانہ سادھا اورکانگریس پارٹی کےانتخابی منشورکودہشت گردوں کی مدد سے تیارکیا گیا، قراردیا۔ انہوں نے کہا ‘ایسا لگ رہا ہےکہ جیسے کانگریس کا انتخابی منشورجیش محمد نے تیارکیا ہے۔ یہ عوام سب جانتی ہے۔ الیکشن میں اس کا زبردست جواب دے گی’۔واضح رہے کہ کانگریس پارٹی نے اسی ہفتہ منگل کواپنا انتخابی منشورجاری کیا ہے، اس میں ملک سے بغاوت اورافسپا جیسے مدعوں کو کانگریس نےشامل کیا ہے۔ کانگریس کے انتخابی منشور’ہم نبھائیں گے’ میں کہا گیا ہےکہ اگرپارٹی اقتدارمیں آتی ہے توفوج کی جدیدکاری، رائٹ ٹوفری ہیلتھ کئیراورآلودگی کے مسئلہ پربھی کام کرے گی۔ کانگریس کے انتخابی منشورکا عنوان ہے: کانگریس ول ڈلیور۔ یعنی ہم نبھائیں گے۔اس کے ساتھ ہی کانگریس نے ملک سے بغاوت کے قانون ختم کرنے اورشمال مشرقی ریاستوں میں سلامتی دستوں کو خصوصی اختیارات دینے والے مسلح افواج خصوصی اختیارات قانون( افسپا) میں ترمیم کا اعلان کیا ہے۔ کانگریس نے منشورمیں لکھا ہے کہ ملک سےغداری کےجرم کوڈیفائن کرنے والی تعزیرات ہند کی دفعہ 124 اے کا بہت غلط استعمال کیا گیا ہے۔ کانگریس پارٹی اگراقتدارمیں آتی ہے تواس دفعہ کو ختم کردیا جائےگا۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here