29مارچ2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)رائل چیلنجرس بنگلورکے کپتان وراٹ کوہلی کی ٹیم لیگ میں اپنا دوسرا میچ ممبئی انڈینس سے ہارگئی۔ ہارکے بعد کوہلی بے حد ناراض نظرآئے۔ اس ناراضگی کا سبب شکست سے زیادہ شکست کی وجہ تھی۔ آخری گیند تک پہنچےاس میچ میں رائل چیلنجرس بنگلورایک نو بال کی وجہ سے ہاری، جس کے بعد کوہلی بے حد ناراض نظرآئے۔دراصل میچ کی آخری گیند نوبال تھی، لیکن امپائرایس روی اسے پکڑنہیں پائے۔ اس کی وجہ سے میچ ممبئی انڈینس نے جیت لیا۔ وراٹ کوہلی اس بات سے سخت ناراض ہوگئے کیونکہ اگرامپائرنےنوبال کی شناخت کرلی ہوتی توپھرشاید میچ کا نتیجہ کچھ اورہوسکتا تھا۔ واضح رہےکہ امپائر ایس روی، آئی سی سی کے ایلیٹ امپائرکے پینل میں واحد امپائرہیں۔میچ کی آخری گیند پرآرسی بی کو جیت کے لئے سات رنوں کی ضرورت تھی اورکریز پرشیوم دوبے موجود تھے، لیکن آخری گیند پرکوئی رن نہیں بنا۔ آرسی بی میچ ہارچکی تھی۔ حالانکہ جب اس گیند کا رپلے دکھایا گیا توپتہ چلا کہ لست ملنگا کا پیرلائن سےآگے ہوگیا تھا اوریہ گیند نوبال تھی۔ حالانکہ فیلڈ امپائراسے پکڑنہیں پائے۔ رپلے دیکھنے کے بعد وراٹ کوہلی ناراض ہوگئے۔میچ کے بعد پریس کانفرنس میں انہوں نے ناراضگی ظاہرکرتے ہوئے کہا ہم آئی پی ایل کھیل رہے ہیں، کوئی کلب کرکٹ نہیں۔ امپائر کواپنی آنکھیں کھول کررکھنی چاہئے۔ آخری گ یند پراس طرح کا فیصلہ بہت بری بات ہے۔ قریبی میچوں میں اگراس طرح کے فیصلے آتے رہے تومیں نہیں جانتا کہ کیا ہوگا۔ امپائروں کو زیادہ محتاط رہنا چاہئے تھا۔میچ جیت چکے کپتان روہت شرما نے کہا جب ہم میدان سے باہرگئے تب ہمیں اس بارے میں پتہ چلا۔ اس طرح کے فیصلے کھیل کے لئے اچھے نہیں ہیں۔ قریبی مقابلوں میں اس طرح کے فیصلے بھاری پڑسکتے ہیں۔ اگرگیند کو نوبال قراردیا جاتا تو آرسی بی میچ جیت سکتی تھی، لیکن امپائرکی اس غلطی کی وجہ سے انہیں لیگ میں دوسری ہارنصیب ہوئی۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here