سعودی عرب:04 جنوری2019(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع) سعودی عرب میں اعلی عدالتی کونسل نے کمزور دلائل پر مبنی فیصلوں کا سد باب کرنے کی خاطر جرم ثابت نہ ہونے تک مشکوک افراد کو کسی قسم کی سزا نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔سعودی عرب کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایس پی اے کی خبر کے مطابق وزیر انصاف و ا علی عدالتی کونسل کے چیئر مینو لید بن محمد الا ثمانی نے مقدمات کی پیروی کے دوران ذی عقل عدالتی اصولوں کو فروغ دینے کے لیے ایک سرکلر جاری کیا ہے۔اس فیصلے کے مطابق مقدمات میں شبہے کی صورت میں کوئی سزا نہیں دی جائیگی ، ملزم کو یا تو مجرم قرار دیا جائیگا یا پھر بری کر دیا جائیگا۔بتایا گیا ہے کہ مذکورہ فیصلہ اس ملک میں انصاف کے قیام کے سلسلے میں ایک تاریخی موڑ کا حامل ہے جو کہ عدالتی نظام میں توازن قائم کرنے میں معاون ثابت ہو گا۔اعلی عدالتی کونسل کا یہ فیصلہ مقتول صحافی جمال خاشقجی کے مقدمے کی پہلی کاروائی کے دن منظر عام پر آنا باعث ِ توجہ ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here