05 ڈسمبر(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)اسرائیلی فوج کی جانب سے ایک ویڈیو فوٹیج جاری کی گئی ہے جس میں لبنان کی سرحد پر موجود سرنگ میں اسرائیلی روبوٹ فوجی کو حزب اللہ کے جنگجوئوں پر فائرنگ کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔خیال رہے کہ اسرائیلی فوج کی جانب سے خود کار فوجی کے حزب اللہ کے خلاف فائرنگ میں‌استعمال کا یہ پہلا موقع ہے۔اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے “ٹوئٹر” اکائونٹ پرایک فوٹیج پوسٹ کی ہے جس میں ساتھ ہی انہوں‌ نے لکھا ہے ک “یہ فائرنگ کا منظر جو آپ دیکھ رہے ہیں آج صبح ہی کا ہے جب حزب اللہ کے جنگجو ایک سرنگ میں داخل ہوئے تو ایک روبوٹ فوجی نے ان پر فائرنگ کی تھی۔ یہ روبوٹ فوجی اپنے سرحد کے اندر حزب اللہ کی کھودی گئی سرنگ میں متعین کیا گیا۔ اس طرح کی تمام سرنگوں کا انجام وہی ہوگا جو دہشت گردوں کے ٹھکانوں کا ہوتا ہے’۔خیال رہے کہ قابض اسرائیلی فوج نے لبنان کے ساتھ سرحد پر حزب اللہ تنظیم کی جانب سے “حملوں کے لیے” کھو دی جانے والی سرنگوں کا انکشاف کیا ہے۔منگل کے روز جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی اراضی کے اندر کی جانب کھو دی جانے والی مذکورہ سرنگوں کو منہدم کرنے کے لیے اسرائیلی فوج کی جانب سے پیر کی شب کارروائی کی گئی۔ بیان کے مطابق ان سرنگوں کی کھدائی کے پیچھے دہشت گرد تنظیم حزب اللہ کھڑی ہے۔ اس مقصد کے لیے حزب اللہ کو ایران کی حمایت اور مالی فنڈنگ حاصل ہے تا کہ لبنانی ملیشیا اسرائیل کے خلاف سرگرمیوں کا دائرہ پھیلا سکے”۔اسرائیلی فوج نے بتایا کہ شمالی کمان کے کمانڈر میجر جنرل یُوال اسٹریک اس عسکری مہم کی قیادت کر رہے ہیں۔ آپریشن میں اسرائیلی فوج کی بڑی نفری شریک ہے۔ فوجی بیان کے مطابق سرنگوں کی کھدائی اسرائیل کے شہریوں کے لیے فوری خطرہ اور اسرائیلی سیاست کی واضح خلاف ورزی ہے۔ اسی طرح حزب اللہ کی جانب سے سنگین خلاف ورزیاں اقوام متحدہ کی قرار دادوں کو نظر انداز کرنا ہے جن میں سرفہرست قرار داد 1701 ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here