کرناٹک:04 ڈسمبر(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع) کرناٹک میں اخبار سے وابستہ ایک صحافی پر اڈپی میں کم سے کم 21 نابالغ لڑکوں کے جنسی استحصال کا الزام عائد کیا گیا ہے ۔ اڈپی کے بیندور علاقہ میں ایک اسٹرنگر کے طور پر کام کرنے والے ملزم صحافی پر پوسکو ایکٹ کے تحت معاملہ درج کیا گیا ہے ۔نیوز18 کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے بتایا کہ چندر ہیمادی جو ایک سنگر بھی ہے ، سال 2012 میں بچوں کی پریشانیوں کے بارے میں لکھنے کیلئے گاوں میں اسکولوں کے دورے پر گیا تھا۔ اس کے ایسا کرنے کا مقصد والدین اور اساتذہ کو اعتماد میں لینا تھا ۔پولیس کے مطابق اس کے بعد نیوز اسٹوری کیلئے مدد مانگنے اور تصویریں کلک کرنے کے بہانے ہیمادی بچوں کو اپنے ساتھ لے جاتا اور اس کا جنسی استحصال کرتا ۔ پولیس نے مزید بتایا کہ اسٹرنگر نے بچوں کو جنسی استحصال کے بارے میں خاموش رہنے کیلئے کہا تھا ۔پولیس نے بتایا کہ ان کے خلاف سبھی معاملے چار سے پانچ دنوں کے اندر درج کرائے گئے ہیں۔ یہ معاملہ 21 لڑکوں کے جنسی استحصال کے الزام میں درج کرائے گئے ہیں ۔ ہم کئی لڑکوں کے اہل خانہ کے رابطے میں ہیں ۔ لڑکوں کی کاونسلنگ ہورہی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ایسے معاملے ابھی اور بھی آسکتے ہیں کیونکہ کافی لوگ شرم کی وجہ سے سامنے نہیں آئے ہیں ۔بیندور پولیس اسٹیشن میں ملزم کے خلاف 16 معاملات درج ہیں۔ گنگولی میں تین ، کولورو او ر کونڈاپور میں ایک ایک معاملہ درج کرایا گیا ہے۔ پولیس حراست میں تین دنوں کے بعد ہیمادی کو پیر کو اڈپی میں ضلع مجسٹریٹ کی عدالت کے سامنے پیش کیا گیا تھا ، جہاں اس کی حراست 17 دسمبر تک بڑھا دی گئی ہے۔ اس کو اخبار سے بھی نکال دیا گیا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here