بھٹکل : 27نومبر (سیدھی بات نیوز سرویس )کل بتا ریخ۲۶/ نو مبر ۲۰۱۸ ؁ ء کو حا فظؔ کر نا ٹکی کی بھٹکل آمد کے مو قع سے جا معہ اسلا میہ بھٹکل کے اساتذہ نے ان کے حمد یہ مجمو عے کے اجرا کا اہتمام کیا ۔ جا معہ اسلا میہ بھٹکل صرف بھٹکل ہی نہیں بلکہ پو رے ہند وستان کے مشہو ر اور معتبر دینی در سگا ہو ں میں سے ایک ہے ۔ یہاں سے فا رغ ہو نے وا لے علما نے درس وتد ریس او رتصنیف و تا لیف میں جس طرح دلچسپی لی ہے وہ قا بل تعریف ہے ۔ شہر بھٹکل میں شعر اواد با اورمصنفین کی کو ئی کمی نہیں ہے ۔ حضرت مو لا نا ابو الحسن علی ند وی کو اس ادارے سے خصوصی لگاؤ تھا، انہیں اکا بر ین کی دعا ؤں کا فیض ہے کہ ادارہ شا دوآ با د ہے ۔ اسی مد رسہ کی وسیع مسجد میں ظہر کی نما ز کے بعد شہر کے علما ء کرام ۔ مد رسہ کے اساتذہ اور طلبا کے درمیان ’’ اللہ جمیل‘‘ کا اجرا مشتر کہ طو ر پر حضرت مو لا نا مقبو ل صاحب ند وی نا ئب نا ظم جا معہ ۔ مو لا نا طلحہ صاحب ند وی صدر جا معہ ۔ مو لا نا محمد الیا س صاحب ند وی ۔ با نی علی پبلک اسکول قاضئ شہر مو لا نا عبد الرب صاحب ند وی ،مو لا نا عظیم صاحب ند وی اور مولانا عبدالعلیم صاحب قاسمی مدیر نقش نوائط کے ہا تھو ں ہو ا ۔ حا فظؔ کر نا ٹکی کی خد ما ت پر رو شنی ڈالتے ہو ئے ۔ مو لا نا مقبو ل صاحب ند وی نے کہا کہ حافظؔ کرناٹکی کی خد ما ت لا ئق ستا ئش ہیں اور سب سے اچھی با ت یہ ہے کہ وہ اپنی تصنیف و تا لیف میں اسلا می تعلیما ت کا خاص خیال رکھتے ہیں ۔ حافظؔ کر ناٹکی نے اس مو قع سے خطا ب کر تے ہو ئے ۔ اہل بھٹکل کی تعلیمی اور تصنیفی خد ما ت کو سر اہا اور پھر اپنے خاص رنگ میں طلبا سے مخا طب ہو کر انہیں فن شا عر ی کی با ریکیوں سے آگا ہ کر تے ہو ئے کئی اشعا ر سنا ئے ۔ اور بچو ں میں اپنی زبا ن اور اپنے ادب سے متعلق جذ با ت کو ابھا را ۔ اور اوزان کی تفہیم کے سا تھ کچھ ربا عیا ں سنا کر سما ں با ند ھ دیا ۔ بعد میں نا مہ نگا روں سے با ت کرتے ہو ئے انہوں نے کہا کہ بھٹکل سچ مچ علم وادب کا گہو ارہ ہے ۔ یہاں کی علمی مجلسوں میں شر کت کر نا ایک خو شگو ار تجر بہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ بڑی با ت ہے کہ اہل بھٹکل اور با الخصوص جا معہ اسلا میہ کے اسا تذہ اور ذمہ دار حضرات حضرت مو لا نا ابو الحسن علی ند ویؒ کی وراثت کو سنبھال کر آگے بڑھ رہے ہیں ۔انہیں کے نا م اور دعا ؤ ں کی بر کت سے بھٹکل میں اور بھی کئی ادارے پھل پھو ل رہے ہیں ۔ اگر تعلیم کا یہی مزاج ہرشہر کا بن جا ئے تو انشا ء اللہ جہا لت کا نا م ونشا ن مٹ جا ئے گا ۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here