08 نومبر(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)یمنی حکومت نے خبردار کیا ہے کہ ایرانی نواز لڑنے والے حوثی باغی الحدیدہ میں جاری آپریشن کے دوران وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے اور دہشت گردی کے سنگین جرائم کا ارادہ رکھتے ہیں۔حکومت کا کہنا ہے کہ حالیہ آپریشن میں بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانے کے بعد حوثی باغی الحدیدہ میں سرکاری عمارتوں کو بم دھماکوں سے تباہ کرنے اور شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کے ساتھ شہریوں پر حملے بھی کرسکتےہیں۔خبر کے مطابق، یمنی حکومت کے ترجمان راجح بادی نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ عرب اتحادی فوج الحدیدہ کو دہشت گردوں سے آزاد کرانے کے لیے یمنی فوج کی بھرپور مدد کر رہی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ الحدیدہ شہر اور اس کی بندرگاہ کو باغیوں سے آزاد کرانے کے ساتھ ساتھ قومی وسائل کو جنگ کے بجائے غریب عوام کی بہبود پر صرف کرنے کے لیے کوشش جاری ہے جبکہ حوثی باغی قومی وسائل کو اپنے مذموم عزائم اور جنگی مقاصد پر صرف کر رہے ہیں۔بادی نے مزید کہا کہ حوثیوں نے الحدیدہ شہر میں بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود جمع کر رکھا ہےجس کی وجہ سے شہریوں کی آزادانہ نقل وحرکت بھی متاثر ہو رہی ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل حوثی ،باب المندب بندرگاہ اور جنوبی بحر الاحمرمیں بھی عالمی تجارتی قافلوں اور مال بردار بحری جہازوں کو حملوں کو نشانہ بنا چکے ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here