بحرین :05 نومبر(سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)بحرین کی اعلیٰ اپیل عدالت نے ایک کالعدم جماعت سے تعلق رکھنے والے تین لیڈروں کو قطر کے لیے جاسوسی کے جرم میں قصور وار قرار دے کر عمر قید کی سزا ئیں سنائی ہیں ۔بحرین کے اٹارنی جنرل اسامہ العوفی نے اتوار کو ایک بیان میں بتایا ہے کہ عدالت نے کالعدم جماعت الوفاق کے رہ نماؤں شیخ علی سلمان ، شیخ حسن سلطان اور علی الاسود کو قطر کے لیے جاسوسی کے جرم میں قصور وار قرار دیا ہے ۔انھوں نے بحرین کے خلاف جاسوسی کی تھی اور اس کے قومی مفادات کو نقصان پہنچا یا تھا۔العوفی کے بہ قول انھوں نے ملک کی سلامتی اور تحفظ کے لیے ضرررساں حساس معلومات حاصل کی تھیں اور انھیں قطر تک پہنچایا تھا۔استغاثہ کے مطابق انھوں نے 2011ء میں بحرین میں بدامنی کو طول دینے کے لیے قطری حکومت کے عہدے داروں سے روابط استوار کیے تھے اور ملک میں جرائم ، تشدد اور افراتفری پھیلائی تھی۔ پراسیکیوٹر کا کہنا ہے کہ مدعا علیہان نے قطری حکومت کو حساس معلومات افشا کی تھیں اور انھوں نے ملک میں آئینی آرڈر پر براہ راست حملہ کیا تھا۔عدالت نے یہ بھی قرار دیا ہے کہ قطر کے ملکیتی الجزیرہ ٹیلی ویژن نیٹ ورک کو قطری حکومت کے علم میں لاتے ہوئے بحرین میں گڑ بڑ کو ہوا دینے کے لیے استعمال کیا گیا تھا۔عدالت نے یہ بھی قرار دیا ہے کہ قطری حکومت نے سابق وزیراعظم حمد بن جاسم ، امیر قطر ِ کے سابق مشیر حمد بن خلیفہ العطیہ اور الجزیرہ نیٹ ورک کے چیئر مین حمد بن ثمر آل ثانی کی نگرانی میں بحرین کی تازہ صورت حال سے متعلق معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی تھی۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here