غزنی:13 اگست (سیدھی بات نیوز سروس/ زرائع)افغان شہر غزنی میں طالبان سے جاری جھڑپوں میں تین روز کے دوران 80 حفاظتی اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔ افغان مسلح افواج کے سربراہ شریف یفتالی کا کہنا ہے کہ عسکریت پسند عام شہریوں کے گھروں میں چھپے بیٹھے ہیں۔ جنرل یفتالی نے غزنی کی صورتحال پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ طالبان عسکریت پسندوں نے عام شہریوں کے گھروں میں پناہ لے رکھی ہے اور وہ شہریوں کے گھروں میں چھپے بیٹھے ہیں جن کی نشاندہی اور تلاش کے لیے شہریوں سے تعاون کی اپیل کی جاتی ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ شہر کی اہم سرکاری تنصیبات کا کنٹرول حاصل کرلیا گیا ہے اور افغان فوج طالبان کے کسی بھی حملے کا مقابلہ کرنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔ واضح رہے کہ افغانستان کے اہم شہر غزنی پر کنٹرول حاصل کرنے کے لیے طالبان اور افغان فوج کے درمیان 3 روز سے شدید لڑائی جاری ہے طالبان سرکاری عمارتوں پر حملے کررہے ہیں جبکہ فوج ان کے حملے ناکام بنانے کے لیے مسلسل کارروائیاں کررہی ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here